Sahih Muslim, Chapter#51 Hadith#47

حَدَّثَنَا عَمْرٌو النَّاقِدُ حَدَّثَنَا يَزِيدُ بْنُ هَارُونَ أَخْبَرَنَا حَمَّادُ بْنُ سَلَمَةَ عَنْ ثَابِتٍ الْبُنَانِىِّ عَنْ أَنَسِ بْنِ مَالِكٍ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- « يُؤْتَى بِأَنْعَمِ أَهْلِ الدُّنْيَا مِنْ أَهْلِ النَّارِ يَوْمَ الْقِيَامَةِ فَيُصْبَغُ فِى النَّارِ صَبْغَةً ثُمَّ يُقَالُ يَا ابْنَ آدَمَ هَلْ رَأَيْتَ خَيْرًا قَطُّ هَلْ مَرَّ بِكَ نَعِيمٌ قَطُّ فَيَقُولُ لاَ وَاللَّهِ يَا رَبِّ. وَيُؤْتَى بِأَشَدِّ النَّاسِ بُؤْسًا فِى الدُّنْيَا مِنْ أَهْلِ الْجَنَّةِ فَيُصْبَغُ صَبْغَةً فِى الْجَنَّةِ فَيُقَالُ لَهُ يَا ابْنَ آدَمَ هَلْ رَأَيْتَ بُؤْسًا قَطُّ هَلْ مَرَّ بِكَ شِدَّةٌ قَطُّ فَيَقُولُ لاَ وَاللَّهِ يَا رَبِّ مَا مَرَّ بِى بُؤُسٌ قَطُّ وَلاَ رَأَيْتُ شِدَّةً قَطُّ ».

It was narrated that Anas bin Malik said: “The Messenger of Allah ﷺ said: ‘The most affluent of the people in this world, of the inhabitants of the Fire, (who will be) will be brought on the Day of Resurrection and dipped once in the Fire. Then it will be said: ‘O son of Adam, did you ever see anything good? Did you ever have any pleasure?’ He will say: ‘No, by Allah, O Lord.’ Then the most destitute of the people in this world, (who will be) of the inhabitants of Paradise, will be brought and dipped once in Paradise, and it will be said to him: ‘O son of Adam, did you ever see anything bad? Did you ever experience any hardship?’ He will say: ‘No, by Allah, O Lord. I never saw anything bad and I never experienced any hardship.’”

حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺنے فرمایا: جس جہنمی کو دنیا میں سب سے زیادہ نعمتیں مل تھیں اس کوقیامت کے دن بلایا جائے گا اور اس کو جہنم میں ایک غوطہ دے کر پوچھا جائے گا۔ اے ابن آدم ! کیا تم نے کبھی کوئی خیر دیکھی تھی ؟ وہ کہے گا : نہیں اللہ کی قسم! اے میرے رب! پھر اہل جہنم میں سے اس آدمی کو لایا جائے گا جو دنیا میں سب سے زیادہ تکلیف میں رہا تھا ، اس کو جنت کا ایک چکر لگوایا جائےگا، اس سے کہا جائے گا: اے ابن آدم ! کیا تم نے کبھی کوئی تکلیف دیکھی ہے ؟کیا تم کو کبھی کوئی تکلیف لاحق ہوئی ہے ؟ وہ کہے گا: نہیں ! اللہ کی قسم! اے میرے رب! مجھے کبھی کوئی تکلیف نہیں پہنچی، اور نہ کبھی کوئی سختی پہنچی ہے۔